گوادر پورٹ پورے خطے کے لئے گیم چینجر ثابت ہوگا: وزیر اعظم

Share on facebook
Share on google
Share on twitter
Share on linkedin


اسلام آباد – وزیر اعظم عمران خان نے جمعہ کے روز ایک ترقیاتی منصوبے کا آغاز کرکے اور صوبے کی طرف دہائیوں کی نظراندازی کو ختم کرنے کے ذریعے بلوچستان کے عوام میں احساس محرومی کے خاتمے کے عزم کا پختہ عزم ظاہر کیا۔

انہوں نے قومی ترقیاتی کونسل کے دوسرے اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کہا ، ’’ بلوچستان کے عوام کے لئے مکمل امن ، سلامتی ، اور معاشی و اقتصادی ترقی کو یقینی بنانا میری حکومت کی اہم ترجیحات ہیں۔

اجلاس میں وفاقی وزراء شاہ محمود قریشی ، اسد عمر ، محمد حمد اظہر ، علی حیدر زیدی ، عمر ایوب خان ، مشیران ڈاکٹر عبدالحفیظ شیخ اور عبدالرزاق داؤد ، وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال خان نے شرکت کی۔ اس موقع پر چیف آف آرمی اسٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ ، معاون خصوصی لیفٹیننٹ جنرل (ر) عاصم سلیم باجوہ ، ڈی جی آئی ایس آئی لیفٹیننٹ جنرل فیض حمید اور دیگر اعلی عہدیدار بھی موجود تھے۔

وزیر اعظم نے کہا کہ وہ بلوچستان کے عوام کی مشکلات سے پوری طرح واقف ہیں اور انھوں نے بہترین ممکنہ انداز میں ریلیف اور خدمات کی فراہمی کے ذریعے صورتحال کا رخ موڑنے کے عزم کا اظہار کیا۔

انہوں نے کہا کہ ماضی میں بلوچستان کے لئے مختص مالی وسائل کو کبھی بھی صوبے کی ترقی کی طرف موڑ نہیں دیا گیا تھا۔

وزیر اعظم نے کہا کہ اس طرح کی صورتحال صوبے میں ترقی کی صورتحال کا باعث بنی ہے اور یہ عوام میں احساس محرومی کا سبب ہے۔

اجلاس میں قومی ترقیاتی ایجنڈے سے متعلق متعدد منصوبوں کا تفصیلی جائزہ لیا گیا۔ ان میں بلوچستان کے دور دراز علاقوں میں مواصلات کے ذرائع کی فراہمی ، آبپاشی ، زراعت ، توانائی کی بہتر سہولیات اور گوادر بندرگاہ سے زیادہ سے زیادہ فائدہ حاصل کرنے کے لئے بارٹر مارکیٹوں کا قیام شامل ہے۔ عمران خان نے کہا کہ گوادر پورٹ کی ترقی نہ صرف بلوچستان کے عوام بلکہ پورے خطے کے لئے گیم چینجر ثابت ہوگی۔ انہوں نے کہا کہ یہ ضروری ہے کہ بنیادی ڈھانچے کی ترقی پر پوری توجہ دی جائے۔ نوجوانوں کے لئے روزگار کی فراہمی ، اور روڈ نیٹ ورک کی تکمیل تاکہ گوادر پورٹ اور سی پی ای سی کی تکمیل سے فائدہ ہو۔

اس سلسلے میں ، وزیر اعظم نے وزیر برائے منصوبہ بندی اسد عمر ، مشیر خزانہ ڈاکٹر عبدالحفیظ شیخ اور وزیر اعلی بلوچستان جام کمال پر مشتمل ایک کمیٹی تشکیل دی جو انہیں ترقی کے ترجیحی شعبوں پر رپورٹ پیش کرے گی۔ خاص طور پر مواصلات ، زراعت ، توانائی اور دیگر اہم شعبوں میں۔ اجلاس میں بلوچستان معدنی ایکسپلوریشن کمپنی کے قیام کے لئے بھی منظوری دی گئی جو بلوچستان کے معدنی وسائل کے بہتر استعمال اور تلاش کی سرگرمیوں کو فروغ دینے کے لئے کام کرے گی۔





Source link

Leave a Replay

Sign up for our Newsletter

%d bloggers like this: